ہوم پیج > تربیت > اپنا طبيب خود انسان
رہائی کی تاریخ : 26 مارس 2018


انسان نفسانى بيماريوں اور اس كے علاج كو واعظين سے سنتا يا كتابوں ميں پڑھتا ہے ليكن بالاخر جو اپنى بيمارى كو آخرى پہچاننے والا ہوگا اور اس كا علاج كرے گا وہ خود انسان ہى ہوگا_ انسان دوسروں كى نسبت درد كا بہتر احساس كرتا ہے اور اپنى مخفى صفات سے آگاہ اور عالم ہے اگر انسان اپنے نفس كى خود حفاظت نہ كرے تو دوسروں كے وعظ اور نصيحت اس ميں كس طرح اثر انداز اور مفيد واقع ہو سكتے ہيں؟ اسلام كا يہ نظريہ ہے كہ اصلاح نفس انسان داخلى حالت سے شروع كرے اور اپنے نفس كو پاك كرنے اور بيماريوں سے محفوظ ركھنے كے رعايت كرتے ہوئے اسے اس كے لئے آمادہ كرے اور اسلام نے انسان كو حكم ديا ہے كہ وہ اپنے آپ كى خود حفاظت كرئے اور يہى بہت بڑا تربيتى قاعدہ اور ضابطہ ہے_ خدا قرآن ميں فرماتا ہے كہ ہر انسان اپنى نيكى اور برائي سے خود آگاہ اور عالم ہے گرچہ وہ عذر گھڑتارہتا ہے_(156)حضرت صادق عليہ السلام نے ايك آدمى سے فرمايا كہ ‘تمہيں اپنے نفس كا طبيب اور معالج قرار ديا گيا ہے تجھے درد بتلايا جا چكا ہے اور صحت و سلامتى كى علامت بھى بتلائي گئي ہے اور تجھے دواء بھى بيان كردى گئي ہے پس خوب فكر كر كہ تو اپنے نفس كا كس طرح علاج كرتا ہے_(157)امام صادق عليہ السلام نے فرمايا ہے كہ ‘ شخص كو وعظ كرنے والا خود اس كا اپنا نفس نہ ہو تو دوسروں كى نصيحت اور وعظ اس كے لئے كوئي فائدہ نہيں دے گا_(158)امام سجاد عليہ السلام نے فرمايا ‘ اے آدم كے بيٹے تو ہميشہ خوبى اور اچھائي پر ہوگا جب تك تو اپنے نفس كو اپنا واعظ اور نصيحت كرنے والا بنائے ركھے گا_(159)امير المومنين عليہ السلام نے فرمايا ہے كہ ‘ كمزور ترين وہ انسان ہے جو اپنے نفس كى اصلاح كرنے سے عاجز اور ناتواں ہو_(160)نيز اميرالمومنين عليہ السلام نے فرمايا ہے كہ ‘ انسان كے لئے لائق يہ ہے كہ وہ اپنے نفس كى سرپرستى كو اپنے ذمہ قرار دے _ ہميشہ اپنى روح كى اور زبان كى حفاظت كرتا رہے_(161)
156_بل الانسان على نفسہ بصيرة و لو القى معاذيرہ_ قيامة / 15_157_قال ابو عبداللہ عليہ السلام لرجل: انك قد جعلت طبيب نفسك و بيّن لك الداء و عرّفت آية الصحة و دلّلت على الدواء فانظر كيف قيامك على نفسك_ كافي/ ج 2 ص 454_158_قال ابوعبداللہ عليہ السلام:من لم يجعل لہ نفسہ واعظاً فان مواعظ الناس لن تغنى عنہ شيئاً_ بحار/ ج 70 ص 70_159_قال ابوعبداللہ عليہ السلام يقول:ابن آدم لاتزال بخير ما كان لك واعظ من نفسك_ بحار الانوار/ ج 70 ص 64_160_ قال على عليہ السلام: اعجز الناس من عجز عن اصلاح نفسہ_ غرر الحكم/ ج 1 ص 169_161_ قال على عليہ السلام: ينبغى ان يكون الرجل مہيمنا على نفسہ مراقباً قلبہ حافظاً لسانہ_ غرر الحكم/ ج 2 ص 862_


لیبل :
تبصرے